صدارتی انتخاب لڑنے کا کوئی ارادہ نہیں: زکر برگ

صدارتی انتخاب لڑنے کا کوئی ارادہ نہیں: زکر برگ

فیس بک کے بانی مارک زکر برگ کا کہنا ہے کہ ان کا امریکہ کے صدرارتی انتخابات میں حصہ لینے کا کوئی ارادہ نہیں ہے۔

'بزفیڈ' نیوز نے ان سے جب اس سے متعلق ایک سوال کیا تو انھوں نے کہا: 'نہیں تو، میری پوری توجہ فیس بک پر ہماری کمیونٹی بنانے کے کام پر مرکوز ہے۔'

زکر برگ کے متعلق ایسی قیاس آرائیوں کا سلسلہ اس وقت شروع ہوا جب انھوں نے ایک سیاسی بیان دیا اور امریکہ کی مختلف ریاستوں کا دورہ کرنے کی بات کہی۔

32 سالہ زکر برگ کی 2020 میں اتنی عمر ہوجائے گی کہ وہ صدارتی انتخابات لڑنے کے اہل ہو جائیں گے۔

اپریل 2016 میں 'فورچیون' جریدے نے خبریں شائع کی تھیں کہ فیس بک نے اپنی کمپنی میں ایسی تبدیلیاں کرنے پر اتفاق کر لیا ہے جس سے زکر برگ کو انتخابات میں حصہ لینے کی اجازت مل سکے گی۔

کرسمس کے موقع پر زکر برگ نے اپنی ایک پوسٹ میں مذہب کے تئیں یہ کہتے ہوئے اپنے رویے میں نرمی ظاہر کی تھی کہ یہ 'بہت اہم ہے۔'

اس سے قبل انھوں نے اپنے آپ کو ملحد قرار دیا تھا جس سے شاید کچھ امریکی شہریوں میں ان کی اپیل محدود ہوجاتی۔

جنوری میں انھوں نے اعلان کیا کہ ان کے لیے امریکہ کی تمام ریاستوں کا دورہ کرنا ایک چیلنچ ہے اور وہ ہر ریاست، بشمول وہ 30 ریاستیں جن کا انھوں نے اس سے قبل دورہ نہیں کیا تھا، جاکر وہاں کے لوگوں سے بات چیت کریں گے۔

امریکہ میں صدارتی امیدوار عام طور پر عوام کی حمایت کے لیے ریاستوں کا دورہ کرتے رہتے ہیں۔

بزفیڈ نیوز کا کہنا ہے کہ زکر برگ کے پاس مسبتقل میں اپنے سیاسی عزائم سے متعلق سوالات کا کوئی فوری جواب نہیں ہے۔