سینٹرل بورڈ آف ڈائریکٹ ٹیکسیز نے چار مزید یک طرفہ ایڈوانس پرائسنگ ایگریمنٹ پر دستخط کئے 

سینٹرل بورڈ آف ڈائریکٹ ٹیکسیز نے چار مزید یک طرفہ ایڈوانس پرائسنگ ایگریمنٹ پر دستخط کئے 

نئی دہلی،07۔فروری ۔وزارت مالیات کے محکمہ مالگذاری کے ادارے سینٹرل بورڈ آف ڈائریکٹ ٹیکسیز (سی بی ڈی ٹی ) نے چار مزید یک طرفہ پرائسنگ ایگریمنٹس (اے پی اے )پر دستخط کئے ہیں۔ 

جن اے پی اے معاہدوں پر گزشتہ روز دستخط کئے گئے ،وہ قومی معیشت کے انفارمیشن ٹکنالوجی ،مالیات اور سازوسامان کی تیاری کے شعبوں سے متعلق ہیں ۔ ان معاہدوں کے تحت جو بین الاقوامی سودے کئے جائیں گے۔ان میں کنٹریکٹ مینوفیکچرنگ ، آئی ٹی خدمات اور سافٹ وئیر سروسیز شامل ہیں۔ان معاہدوں پر دستخط کے بعد سی بی ڈی ٹی کے ذریعہ دستخط کئے جانے والے اے پی اے معاہدوں کی تعداد 130 ہوگئی ہے، جن میں 8 دو فریقی اے پی اے اور 122 یک طرفہ اے پی اے معاہدے شامل ہیں۔ جاری مای سال کے دوران کل 66 اے پی اے معاہدوں پردستخط کئے جاچکے ہیں جن میں 5دو فریقی اور 61 یک طرفہ یا یک فریقی معاہدے شامل ہیں۔ اس کے ساتھ ہی سی بی ڈی ٹی کو توقع ہے کہ جاری مالی سال کے آخر تک مزید اے پی اے معاہدوں پر دستخط کئے جائیں گے ۔ 

واضح ہوکہ اے پی اے اسکیم 2012 میں انکم ٹیکس ایکٹ میں شروع کی گئی تھی اور ان دفعات کا رول بیک 2014 میں شروع کیا گیا تھا۔ اے پی اے اسکیم کے آغاز سے اب تک اس میں ٹیکس دہندگان کی دلچسپی روز بہ روز بڑھتی جاری ہے ،جس کے نتیجے میں 700 سے زائد درخواستیں پچھلے پانچ برس کے دوران داخل کی جاچکی ہیں جن میں یک طرفہ یا یک فریقی اور دو فریقی درخواستیں شامل ہیں۔ 

اے پی اے اسکیم کی ترقی سے برعکس خطرات سے مستثنیٰ ٹیکس نظام سے متعلق سرکار کے عہد کو استحکام حاصل ہوگا ۔ واضح ہوکہ ہندوستان کے اس انڈین اے پی اے پروگرام کی قومی اور بین الاقوامی سطح پر زبردست ستائش کی گئی ہے کیونکہ اس سے قیمتوںکی منتقلی کے پیچیدہ مسائل کا صاف ستھرا اور شفاف طریقے سے تدارک کرنا ممکن ہوسکا ہے ۔